Home / News / مظفر گڑھ،استاد کے مبینہ تشدد سے 13سالہ طالبعلم جاں بحق،مقدمہ درج

مظفر گڑھ،استاد کے مبینہ تشدد سے 13سالہ طالبعلم جاں بحق،مقدمہ درج

مظفر گڑھ (مظفرگڑھ ڈاٹ سٹی ۔ 12 اپریل2021ء) مظفرگڑھ کی تحصیل کے علاقے پل اٹھاسی میں مبینہ طور پر مدرسے سے چھٹیاں کرنے پر استاد کے تشدد سے 13 سالہ طالبعلم ہوگیا۔تھانہ سٹی کوٹ ادو نے لڑکے کے والد مرید حسین کی مدعیت میں مدرسے کے استاد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔واقعہ کی فرسٹ انفارمشین رپورٹ (ایف آئی آر) کے مطابق مرید حسین کے 3 بیٹے مدرسے میں قرآن پاک کی تعلیم حاصل کرنے جاتے تھے جنہوں نے 3، 4 روز سے مدرسے کی چھٹی کی تھی۔

والد کے مطابق وقوعہ کے روز وہ خود بچوں کو مولوی محمد اکبر کے پاس قرآن پاک کی تعلیم حاصل کرنے کے لیے چھوڑ کر آئے اور بتایا کہ چھٹی کے وقت بھی خود لینے آئیں گے تاہم دوپہر کو ان کا ایک بیٹا دوڑتا ہوا گھر آیا اور بتایا کہ استاد اس بھائی سلیمان کو ڈنڈے سے ماررہے ہیں جس پر وہ فوراً مدرسے پہنچے تو دیکھا کہ باقی بچے قرآن پاک پڑھ رہے ہیں تاہم ملزم بدستور سلیمان پر تشدد کررہا تھا۔

والد کے مطابق جب انہوں نے استاد سے اپنے بیٹے کو چھڑایا تو وہ نیم بے ہوشی کی حالت میں تھا جسے گھر لے جایا گیا، تاہم وہاں جب حالت بگڑنے لگی تو اسے ہسپتال لے جایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے ابتدائی طبی امداد کے بعد نشتر ہسپتال ملتان جانے کو کہا۔ایف آئی آر میں والد نے بتایا کہ نشتر ہسپتال جاتے ہوئے ان کا بیٹا راستے میں دم توڑ گیا جس کے بعد استاد کے ورثا نے راضی نامے کے لیے کوشش کی تاہم انہوں نے کسی قسم کے راضی نامے سے انکار کردیا۔

والد کی درخواست پر نے مولوی محمد اکبر کے خلاف تعزیرات پاکستان کی دفعہ 302 کے تحت مقدمہ درج کرکے تفتیش کا آغاز کردیا اور ملزم کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں۔اس سے قبل لاہور کے علاقے برکی میں مبینہ طور پر قاری کے تشدد سے مدرسے کا 9 سالہ طالب علم ہو گیا تھا۔

Loading...
%d bloggers like this: